وہی ہے باعث تخلیق ہستی عالم

وہی ہے باعث تخلیق ہستی عالم
وہی ہے مظہر انوار ، نازش آدم!
صراقتوں کا پیمبر ، حقیقتوں کا امیں
لطافتوں کا مرقع ، کمال حسن شیم
خدا سے مانگے وہ بخشش ہر آدمی کے لیۓ
بشر سے مانگے وہ تسبیح خالق اعظم
وہ نفرتوں کی کو پاٹنے والا
وہ جس کے خلق سے دشمن بھی بن گۓ ہمدم
وہی ابد کے سفر میں ہے آسرا سب کا
ازل سے جس کی ہے سب پر نوازش پیہم
وہ جس کی یاد سے ملتی ہے دولت تسکیں
وہ جس کا نام ہے زخموں کے واسطے مرہم
وہ راہبر بھی ہے ، منزل بھی ، ہمسفر بھی وہی
کڑے سفر کی کڑی دھوپ میں وہ ابر کرم!
اسی پہ بھیج درود و سلام اے واصف
اسی کے فیض سے قائم ہے عاصیوں کا بھرم

Print Friendly, PDF & Email

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*